Pages

3/22/2005

پنجابی نظم و قطعہ

میری زندگی دے چار دن لنگ جان گے کڑے تیرے نال نئیں کسے ہور نال سئی تنوں نخرے وکھان دی لوڑ کوئی نئیں مینوں کڑیاں دی شیر وچ تھوڑ کوئی نئیں تنوں حسن تے اپنے غرور کناں سی تو نہ سوچیا غریب مجبور کنا سی تیری ضد میری اکھیاں دا ہنیر بن گئی مینوں چنڈ مار کے تو دلیر بن گئی میرا خط میرے سامنے تو چیر پھاڑ کے کناں ہنسی ئیں تو میرا کلیجہ ساڑ کے کناں گھٹیا تو فون تے جواب دتا سی میں تے پیار نال تینوں گلاب دتا سی ہون میرے کول بیبیاں دی تھوڑ کوئی نئیں تنوں نخرے وکھان دی لوڑ کوئی نئیں کل مینوں اک کڑی پرپوز کیتا اے میں وی اونوں محبتاں دا تحفہ دتا اے اودا رنگ دودھ دی ملائی ورگا اودا لہجہ میری نکی پرجائی ورگا اودا قد بت میرے نال میل کھاندا اے سانوں ویکھ کے زمانہ سارا سڑ جاندا اے گل مکدی مکاواں اودا جوڑ کوئی نئیں تنوں نخرے وکھان دی لوڑ کوئی نئیں قطعہ کجھ اونجھ وی راواں اوکھیاں سن کجھ گل وچ غم دا طوق وی سی کجھ شیر دے لوک وی ظالم سن کجھ سانوں مرن دا شوق وی سی

2 تبصرے:

Imran Saleem نے لکھا ہے کہ

huth jorr kar aj ek urz karni
tai sune ek gal wai zaroor mahi

chalai lukh wai hawa wichorrian di
tai kadi hoonwee na akhiyaan to door mahi

tu turr gaya door jai akhiyaan to
mai sab kuch apna har jana

mere dill di dharkan dasdee aae
mai wichar kar taithoon mar jana

ek tu hi dill which wasdaan aaen
kisai hoor da sajna daira naeen

iss hasdee wasdee dunya which
koi tere bajo mera naeen

soon rab di teryaan dukha nai
mere jindree da guth bhar jana

tu turr gaya door jai akhiyaan to
mai sab kuch apna harr jana...

شعیب صفدر نے لکھا ہے کہ

عمران اچھی نثم ہے

اگر ممکن ہے تو اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

بد تہذیب تبصرے حذف کر دیئے جائیں گے

نیز اپنی شناخت چھپانے والے افراد کے تبصرے مٹا دیئے جائیں گے۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔