Pages

4/19/2005

انقلاب

ایک ملک میں انقلاب آیا۔اس ملک کا ایک باشندہ بیرونی ملک کے دورے سے واپس آیا ۔ائرپورٹ سے نکل کر اس نے ٹیکسی ڈرائیور سے کہا "کسی نزدیکی دکان پر ٹھہرجانا، مجھےسگریٹ خریدنا ہے"۔ "سگریٹ خریدنے کے لئے آپ کو چرچ جانا پڑے گا"۔ڈرائیور نے جواب دیا ۔ "کیا؟ چرچ تو وہ جگہ ہے جہاں عبادت کی جاتی ہے "۔ "لوگ عبادت کے لئے یونیورسٹی جاتے ہیں"۔ "کیا؟ یونیورسٹی میں تو وہ لوگ نہیں ہوتے جو پڑھتے ہیں؟"۔ "نہیں پڑھنے والے تو جیل مہں ہوتے ہیں"ڈرائیور نے کہا "جیل میں تو مجرم ہوتے ہیں"۔ "اوہ نہیں، وہ تو برسر اقتدار ہیں"۔

2 تبصرے:

جہانزیب نے لکھا ہے کہ

اچھا ہے

irfan نے لکھا ہے کہ

لطیفہ اچھا ھے –اگر اس کو پاکستانی سٹائل میں تحر یر کیا جائے تو اور بھی زیادہ جوبصورت ہو جائے۔

اگر ممکن ہے تو اپنا تبصرہ تحریر کریں

اہم اطلاع :- غیر متعلق,غیر اخلاقی اور ذاتیات پر مبنی تبصرہ سے پرہیز کیجئے, مصنف ایسا تبصرہ حذف کرنے کا حق رکھتا ہے نیز مصنف کا مبصر کی رائے سے متفق ہونا ضروری نہیں۔

بد تہذیب تبصرے حذف کر دیئے جائیں گے

نیز اپنی شناخت چھپانے والے افراد کے تبصرے مٹا دیئے جائیں گے۔

اگر آپ کے کمپوٹر میں اردو کی بورڈ انسٹال نہیں ہے تو اردو میں تبصرہ کرنے کے لیے ذیل کے اردو ایڈیٹر میں تبصرہ لکھ کر اسے تبصروں کے خانے میں کاپی پیسٹ کرکے شائع کردیں۔