ّ بے طقی باتیں بے طقے کام: 04/17/05

اوقات

۔(درست معنوں میں ایک بے طقی تحریر)۔
اکثر آپ کے اوقات سے آپ کی اوقات کا اندازہ ہوتا ہے ۔ ساری بات اوقات کی ہے ۔ کیا آپ اوقات والے ہیں؟ بعض افراد دوسروں کو ان کی اوقات یاد دلاتے رہتے ہیں"دو ٹکے کی اوقات ہے تمہاری" کیا کہا ٹکہ پاکستان میں نہیں چلاتا یہ بنگلا دیش کا سکہ ہے ابے دو پیسے کی کر لے اب بتائے اوقات میں کوئی فرق پڑا ؟ نہیں نا۔مگر اگر کوئی چھوٹا ( قد یا عمر میں نہیں) بڑے سے اس کی اوقات پوچھے تو وہ(بڑا) نہ صرف اپنی اوقات سے اسے آگاہ کرتا ہے بلکہ اس کی اوقات بھی اسے سمجھا دیتا ہے اس سمجھ بوجھ میں رہ جانے والے کسی کسر کو سرکاری ڈاکٹر دور کر دیتے ہیں۔ ان ڈاکٹروں کی اپنی اوقات ان کے پرائیویٹ کلینک کے باہر درج ہوتی ہے "اوقات : صبح ۱۰ سے دوپہر ۱ بجے اور شام ۵ سے رات ۹ بجے تک" ۔ ملازم پیشہ آدمی کی اوقات صبح ۹ سے شام ۵ بجے تک۔ان کو ان کا سینیئر(افسر) لاکھ کہئے "اپنی اوقات میں رہو" یہ ایک کان سے سن کر دوسرے کان سے نکال دیتے ہیں اور اوقات سے اکثر باہر رہتے ہیں آخر کیوں نہ ہوں ؟ اؤرٹائم ملتا ہے۔
بڑے تلخ (گھٹیا) ہیں بندہ مزدور کے کی اوقات