2/05/2013

سنسرسپ اور خاموشی!!

تخلیق کا کتنا تعلق سنسر شپ سے ہے؟ کیا سنسرشپ کسی عمدہ نظم، غزل، شعر، افسانے، کہانی، مضمون، گیت، تصویر، یا فنون لطیفہ کیسی اور شکل کی تخلیق کو وجود میں آنے سے روک سکتی ہے؟ میرا نہیں خیال ایسا ممکن ہو!
پابندی اظہار! اظہار کو تخلیق ہونے سے نہیں روک سکتی۔اظہار شکل بدل کر دوسرے راستے سے سامنے آ جاتا ہے! زبان پر پہرے سوچ کو پابند نہیں کرسکتے۔
ہاں اگر کوئی خود سے اپنے گرد ایک دائرہ بنا لے تو ممکن ہے کہ اُس کی تخلیق کی طاقت پرواز کی قوت سے محروم ہو جائے اور وہ کوئیں کا مینڈک ہو کر رہ جائے! مگر حکومت و معاشرے جب اظہار پر پابندی لگاتے ہیں تو تخلیق اہل سمجھ کو وہ دھچکا دیتی ہے جو سیدھی بات بھی نہیں دے سکتی.

5 تبصرے:

  1. خوبصورت اور سچے الفاظ
    بہت خوب کہا ہے آپ نے

    جواب دیںحذف کریں
  2. تخلیق کسی سچے لکھاری کا ہی کام ہے۔ جب سامنے میرے جیسا ماجھا گاما ہو جس میں تخلیق کا پرزہ ہی نہیں ہے تو یہی کچھ ہونا ہے۔

    جواب دیںحذف کریں
  3. @Muhammad Shakir Aziz

    بھرا جی ۔۔۔ جب آپ کو آخری دفعہ دیکھا تھا تو آپ کے پرزے پورے تھے ۔۔۔ ؛)

    جواب دیںحذف کریں
  4. @Muhammad Shakir Aziz
    ہاں میں جانتا یوں کہ مجھ جیسے اگر بلاگر بنے بیٹھے ہیں تو اس کا مطلب ہے کہ
    معاشرے کے اصلی والے سیانے لوگ یا تو چھپے بیٹھے ہیں
    یا سارے مر کھپ چکے ہیں
    جو میں لکھ رہا ہون یہ ناں ادب ہے ناں تکنیک
    اور ناں ہی علم ہے
    بس ایک سوچ کو بس جو دل میں ایا وہ لکھے جا ہرا ہوں
    کہ کائینات کے بنانے والے کا فیصلہ ہے کہ کچھ لوگ لکھیں گے
    اگر اہل علم نہیں لکھیں گے تو خاور جیسے لکھیں گے

    جواب دیںحذف کریں
  5. سنسر شپ تخلیق کو روک نہیں سکتی لیکن پابند ضرور کر سکتی ہے۔ یہ سچ ہے کہ تخلیق ضرور راستہ بدل کر کسی اور شکل میں ظاہر ہو جائے گی۔ سنسرشپ کے بغیر تخلیق کو ہوا ضرور ملتی ہے، کیونکہ سوچتے تو سب ہی ہیں، اگر ماحول سازگار ملے تو عام سا سوچنے والے بھی اعلیٰ تخلیق کاروں سے آگے نکل جاتے ہیں۔

    جواب دیںحذف کریں

بد تہذیب تبصرے حذف کر دیئے جائیں گے

نیز اپنی شناخت چھپانے والے افراد کے تبصرے مٹا دیئے جائیں گے۔