11/27/2011

محبت

آہ کیا چیز ہے یہ محبت!! نہ ہو کسی سے تو زندگی آسان، ہو جائے تو عذاب۔
یار لوگ کہتے ہے زندگی عزاب تب نہیں ہوتی جب محبت ہو جائے تب ہوتی ہے جب اُس کا احساس ہو جائے۔ خود کو بھی اور جس سے ہوئی ہو اُس کو بھی۔
اُس وقت محبت کرنے والا اُسے جذبے کو نعمت سمجھ رہا ہوتا ہے  مگر وہ دراصل  ایک امتحان سے گزر رہا ہوتا ہے۔
اور اہل نظر پرکھ لیتے ہیں کہ یہ امتحان اب عذاب بنا کہ تب۔

 یہ میرے خیالات ہیں لہذا اتفاق کرنا ضروری نہیں

2 تبصرے:

  1. اتنا کم لکھنا تو عنوان کے ساتھ ناانصافی ہے۔

    جواب دیںحذف کریں
  2. يہ محبت ہے کس بلا کا نام ۔ اگر ميں اپنی بيوی سے کہہ دوں کہ مجھے تم سے محبت ہے تو وہ مجھے ڈاکٹر کے پاس لے جائے گی اور کہے گی ڈاکٹر صاحب ہماری شادی کو چار دہائياں ہو گئی ہيں ۔ کل تک اچھے بھلے آج انہيں پتہ نہيں کيا ہو گيا ہے

    جواب دیںحذف کریں

بد تہذیب تبصرے حذف کر دیئے جائیں گے

نیز اپنی شناخت چھپانے والے افراد کے تبصرے مٹا دیئے جائیں گے۔