ّ بے طقی باتیں بے طقے کام: 09/22/09